03 September 2014 - 14:22
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 7214
فونت
حجت الاسلام راجہ ناصر عباس جعفری:
رسا نیوز ایجنسی – مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے سربراہ نے اس بات کی تاکید کرتے ہوئے کہ آج پرامن مظاہرین پر طاقت کے بے دریغ استعمال کا مشورہ دینے والے مفاد پرست سیاست دان قوم کو بتائیں کہ افواج پاکستان سمیت 50 ہزار سے زائد پاکستانیوں کے قاتلوں کیخلاف ان کی زبانیں کیوں گنگ رہیں کہا: ظلم و نا انصافی کے خلاف بیداری کو بغاوت کا نام دینا مفاد پرستی ہے ۔
حجت الاسلام راجہ ناصر عباس جعفري


رسا نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق، مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے سربراہ حجت الاسلام راجہ ناصر عباس جعفری نے ظلم و نا انصافی کے خلاف عوامی بیداری کو حکمرانوں کی جانب سے بغاوت کا نام دیئے جانے پر سخت رد عمل کا اظھار کیا ۔


انہوں نے یہ کہتے ہوئے کہ اگر پرامن جدوجہد کا نام بغاوت ہے تو ہم یہ بغاوت کرتے رہیں گے کہا: آج پارلیمنٹ میں قومی اور ریاستی مفادات کو پس پشت ڈال کر ذاتی مفادات کا دفاع کرنا افسوس ناک اور قوم کیلئے لمحہء فکریہ ہے!


حجت الاسلام جعفری نے پارلیمنٹ میں پاک فوج کے خلاف ہرزہ سرائی کی مذمت کرتے ہوئے کہا: آج پرامن مظاہرین پر طاقت کے بے دریغ استعمال کا مشورہ دینے والے مفاد پرست سیاست دان قوم کو بتائیں کہ افواج پاکستان سمیت 50 ہزار سے زائد پاکستانیوں کے قاتلوں کیخلاف ان کی زبانیں کیوں گنگ رہیں؟، کیا یہ شہداء کے خون سے غداری نہیں تھی؟، آئین سے بغاوت کرنے والوں سے مذاکرات کا مشورہ دینے والے آج کیوں طاقت کے استعمال کا مشورہ دے رہے ہیں ۔


انہوں نے مزید کہا: موجودہ حکمرانوں کا سابقہ دور میں احتجاج کرتے ہوئے سپریم کورٹ پر دھاوا اور ہلہ بولنا آئینی تھا اور آج عوام کا ظلم و بربریت، دھاندلی، جعلی مینڈیٹ کیخلاف سڑکوں پر آنا بغاوت ہے یہ کون سے سیاست ہے ؟


ایم ڈبلیو ایم کے سربراہ نے اس بات کو بیان کرتے ہوئے کہ آج پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس کی کارروائی سے ثابت ہوگیا کہ سیاست دان ناصرف قوم کو تحفظ فراہم کرنے میں ناکام ہوگئے ہیں بلکہ مظلوموں کو ان کا حق دینے میں بھی بری طرح سے ناکام ہوئے ہیں کہا: پارلیمنٹ کا مشترکہ اجلاس دراصل مفاد پرستوں کو تحفظ دینے کیلئے بلایا گیا تھا لیکن حکمران یاد رکھیں کہ ظلم کی حکومت زیادہ دیر نہیں چلنے والی ۔


انہوں نے پارلیمنٹ کے جوائنٹ اجلاس میں اپوزیشن اور حکومتی اراکین کے تقاریر پر اپنے ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا: لاہور سے اسلام آباد تک پاکستان عوامی تحریک کے کارکنان اپنی جانوں کا نذرانہ دیتے آئے ہیں لیکن انہوں نے قانون کو کبھی ہاتھ میں نہیں لیا ۔


حجت الاسلام جعفری نے اس بات کی تاکید کرتے ہوئے کہ ہماری تاریخ گواہ ہے کہ ہمارے آباوُ اجداد نے اس ملک کیلئے قربانیاں دی ہیں، ہمیشہ ظلم کیخلاف آواز بلند کی ہے، کوئٹہ سے لیکر پارلیمنٹ تک پرامن مظاہرے کئے ہیں مگر ایک پتا تک نہیں ٹوٹ کہا: حکومت نے اپنے گلو بٹوں سے حملہ کرا کے پرامن تحریک کو پرتشدد ثابت کرنے کی کوشش کی ہے، جس کی ہم مذمت کرتے ہیں۔
 

تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬