11 August 2014 - 07:20
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 7125
فونت
حجت الاسلام امین شہیدی :
رسا نیوز ایجنسی ـ مجلس وحدت مسلمین کے مرکزی رہنما نے کہا : کربلا میں امام حسین علیہ السلام نے قربانی دی، اس کے بعد کربلا کے جناب زینب سلام اللہ علیہا اور حضرت زین العابدین علیہ السلام وارث تھے،جنہوں نے اس پیغام کو دنیا تک پہنچایا ، آج شہدائے ماڈل ٹاؤن کے وارث آپ ہیں، آپ نے کربلائے ماڈل ٹاؤن کو زندہ کرنا ہے۔
حجت الاسلام امين شہيدي


رسا نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق مجلس وحدت مسلمین کے مرکزی رہنما حجت الاسلام امین شہیدی نے ماڈل ٹاؤن لاہور میں یوم شہداء کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا : کربلا میں امام حسین علیہ السلام نے قربانی دی، اس کے بعد کربلا کے جناب زینب سلام اللہ علیہا اور حضرت زین العابدین علیہ السلام وارث تھے،جنہوں نے اس پیغام کو دنیا تک پہنچایا اور یزید کو گالی بنا دیا، آج شہدائے ماڈل ٹاؤن کے وارث آپ ہیں، آپ نے کربلائے ماڈل  ٹاؤن کو زندہ کرنا ہے۔

انہوں نے کہا : آج شریفوں کے چہرے سے شرافت کی نقاب اتر چکی ہے، آج ضیاءالحق کے معنوی فرزند نواز شریف نے اس آمر کو بھی شرما دیا ہے، وہ وردی پہن کر ظلم کرتا تھا اور یہ جمہوریت کے لبادے میں مظالم کے پہاڑ توڑ رہے ہیں۔ آج یہ وقت آگیا ہے کہ تم دہشت گردوں کی سرپرستی میں اتنے آگے نکل گئے تھے کہ قاتل اعلٰی نے طالبان سے مخاطب ہو کر کہہ دیا تھا کہ آپ تو ہمارے بھائی ہو، پنجاب میں وارداتیں نہ کرو، آج انہوں نے طالبان کو تحفظ دینے کی بھرپور کوشش کی۔

مجلس وحدت مسلمین کے مرکزی رہنما نے کہا : اب ٹی وی کی نشریات روک رہے ہیں، تاکہ آپ کی آواز لوگوں تک نہ پہنچے۔ حکمران کہہ رہے کہ ہمارا یہ باہر آنا آپریشن ضرب عضب کو ناکام کرنے کی سازش ہے، افسوس قاتل مظلوم بننے کی کوشش کر رہے ہیں، یہ تو خود آپریشن کے مخالف تھے۔

انہوں نے کہا : ہر گزرتا دن ان کے اقتدار کو بحر ہند میں غرق کرتا جائے گا ، ہماری خوش قسمتی ہے کہ خارجیوں نے جس طرح کا ماحول بنا کر شیعہ سنی کو لڑانے کی کوشش کی، تو آج دیکھ لیں کہ شیعہ اور سنی اس پنڈال میں ایک قوت بن کر کھڑے ہیں۔

حجت الاسلام امین شہیدی نے کہا : حکمرانوں نے ہمیں روکنے کے لئے پوری طاقت استعمال کی، اپنے درندے ہونے کا پورا ثبوت دیا۔ لاہور اور پورے ملک کو سیل کیا، لیکن عوام کا سمندر نکلا اور ماڈل ٹاؤن تک پہنچا ہے۔ یہ لاکھوں لوگ رکاوٹیں عبور کرکے پہنچے ہیں، اگر کھلی اجازت ہوتی آج حکمرانوں کے اقتدار کا آخری دن ہوتا۔
 

تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬