‫‫کیٹیگری‬ :
15 December 2015 - 22:21
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 8818
فونت
سیدہ سدرہ نقوی :
رسا نیوز ایجنسی ـ جعفریہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن طالبات پاکستان کی سربراہ نے کہا : پارہ چنار اور نائیجیریا میں ہونے والی ظلم و بربریت کی سخت مذمت کرتے ہیں، اس معاملے میں مسلمان ممالک کی خاموشی پہ گہری تشویش کا اظہار کرتی ہوں ۔
سيدہ سدرہ نقوي


رسا نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق جعفریہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن طالبات پاکستان کی سربراہ سیدہ سدرہ نقوی نے پارہ چنار پاکستان اور نایئجریا میں ملت تشیع پہ ہونے والے ظلم و بربریت پہ گہرے غم و غصے کا اظہار کرتے ہوئے کہا : تمام بنی نوع انسان کو آزادی حاصل ہے کہ وہ اپنے دین کی تعلیمات کے مطابق زندگی بسر کریں ۔

انہوں نے وضاحت کرتے ہوئے کہا : اسلام سلامتی و امن کا دین ہے ، اسلام محبت کا دین ہے اور محبت کسی خاص گروہ یا فرقے سے نہیں بلکہ انسانیت سے محبت کا دین ہے لہذا مذہبی تعصب میں انسان کشی کسی طور بھی قابل قبول نہیں ، پارہ چنار اور نایئجیریا حکومت کی سخت مذمت کرتے ہیں ۔

جعفریہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن طالبات پاکستان کی سربراہ نے کہا : اس معاملے میں اسلامی ممالک کی خاموشی پر گہرے غم و غصے کا اظہار کرتے ہیں، اور ہم جعفریہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن طالبات پاکستان کے پلیٹ فارم سے اپنا پر امن احتجاج ریکارڈ کرواتے ہیں اور دیگر تمام درد دل رکھنے والوں سے بھی اپیل کرتے ہیں کہ وہ اس ظلم کے خلاف آواز اٹھائیں ، مظلوم کسی بھی دین اور مذہب سے ہو ہم اسکے ساتھ ہیں ۔

انہوں نے وضاحت کرتے ہوئے بیان کیا : جس طرح امام حسین علیہ السلام کا پاکیزہ خون رائیگا نہیں گیا اسی طرح دور حاضر کے مظلومین کی عظیم قربانیاں رائیگاں نہیں جائیں گی ۔

سید سدرہ نقوی نے کہا : حکومت پاکستان کو اب نیشنل ایکشن پلان کی ناکامی کو قبول کر لینا چاہیئے ملت تشیع جو کے پر امن قوم ہے ہر روز نئے سے نئے مصائب اور صعوبتوں سے گزر رہی ہے حکومت پاکستان پر امن شہریوں کی حفاظت میں ناکام ہوچکی ہے حکومت سے مطالبہ کرتے ہیں کہ پاکستان کا امن تباہ کرنے والوں کے خلاف جلد از جلد ایکشن لے مز ید نائیجریا میں ہونے والے ظلم کے خلاف پاکستان اپنا مثبت ثالثی کا کردار ادا کرے ۔

انہوں نے بیان کیا : ہم شیخ ابراہیم زکزاکی کی خدمت میں انکے اہل خانہ اور دیگر ملت تشیع کی قیمتی جانوں کی تعزیت پیش کرتے ہیں اور انکی رہائی کے لئے اپیل کرتے ہیں۔
 

تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬