14 May 2020 - 18:52
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 442731
فونت
حجت الاسلام سعدی رسا نیوز کے ساتھ گفتگو میں؛
اسلامی تحقیقاتی مرکز اور شہید فاضل اسٹرڑیجیک سینٹر کے سربراہ نے عالمی روز قدس کے نزدیک ہونے کی طرف اشارہ کرتے ہوئے بیان کیا ہے کہ فلسطین اسلامی قوم کا دھڑکتا ہوا دل ہے ۔

عالمی یوم قدس کے نزدیک ہونے کے ساتھ « معملولی تعلقات بنانے کے ارادے پر عرب حاکموں کا اصرار اور عوام کی مخالفت » کے عنوان سے ایک ویڈیو کانفرنس رسا نیوز ایجنسی کے مرکزی دفتر قم میں عربی زبان میں منعقد ہوئی ۔

اس ویڈیو کانفرنس میں عرب دنیا کی مشہور شخصیت مانند عراق کے اسلامی تحقیقات اور شہید فاضل اسٹرڑیجیک سینٹر کے سربراہ ڈاکٹر السعدی ، بحرین الحق تحریک کے نمایندے استاد عبدالغنی الخنجر اور حزب اصلاح و وحدت اور مفتی اہل سنت لبنان کے صدر شیخ ماهر عبدالرزاق نے شرکت کی اور اہم عناوین خاص کر عرب ممالک کی طرف سے صیہونی غاصب حکومت کے ساتھ معمولی تعلقات کو بحال کرنے کے لئے بنائی جا رہی سیریل و فیلم پر تنقید کرتے ہوئے تبادل خیال کیا گیا ۔

اسلامی تحقیقاتی مرکز اور شہید فاضل اسٹرڑیجیک سینٹر عراق کے سربراہ ڈاکٹر احمد سعدی نے اس ویڈیو کانفرنس میں عالمی روز قدس کے نزدیک ہونے کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا : اس عالمی روز پر مسلمان فلسطین و مسجد الاقصی ، پیغمبر اکرم (ص) کے پہلے قبلہ جو اسلامی قوم کے لئے دائمی زخم ہے اس کی حمایت کی تاکید کرے نگے ۔

فلسطین اسلامی قوم کا دھڑکتا ہوا دل ہے
 

فلسطین اسلامی قوم کا دھڑکتا ہوا دل ہے

ڈاکٹر احمد سعدی نے بیان کیا : صیہونیست فلسطینیوں کے سرزمین کے غاصب ہیں ، نہ ان لوگوں اور نہ ہی ٹرمپ کو کسی طرح سے اس زمین سے استفادہ کرنے کا کوئی حق حاصل ہے اور وہ لوگ جو چیز صدی معاملہ سے حاصل کرنے کی کوشش میں ہیں یہ صرف ایک خام خیالی کے علاوہ کچھ نہیں ہے اس وجہ سے ان لوگوں کو اپنے ذہن سے اس وہم کو نکال دینا چاہیئے ۔

انہوں نے وضاحت کی : دنیا والوں کے لئے عالمی روز قدس کا پیغام یہ ہوگا کہ فلسطین اسلامی قوم کا دھڑکتا ہوا دل ہے اور ہمیشہ اس کی یاد قلب میں باقی ہے اور صیہونی حکومت ایک ناجائز حکومت ہے اور صدری معاملہ بین الاقوامی قانون کے خلاف ورزی کا روشن مصداق ہے ۔

اسلامی تحقیقاتی مرکز اور شہید فاضل اسٹرڑیجیک سینٹر عراق کے سربراہ نے بیان کیا : اس وقت بعض عربی ممالک میں مسلمانوں پر جو بونے حکومت کر رہے ہیں ، صدی معاملہ کی حمایت کی وجہ سے اپنی عزت و آبرو خاک میں ملا دی ہے ۔

قابل ذکر ہے کہ عربی ممالک کی اکثر حکومتیں صدی معاملہ سامنے آنے کے بعد اسلامی قوم کے درمیان اپنی اہمیت کھو دی ہے اور صیہونی حکومت کے ساتھ معلمولی تعلقات رکھنے پر مذمت کا سامنا کر رہی ہے ، اس وقت دو روش اختیار کی جا رہی ہے ، ظاہرا خود کو پوشیدہ کر لیا ہے اور فلسطین کی حمایت کا علان کر رہے ہیں اور یا صیہونی حکومت کے ساتھ تعلقات کو ظاہر کرتے ہوئے مخالفین کا سر کچل رہے ہیں کہ اس میں سعودی عرب ، بحرین اور عرب امارات سر فہرست ہیں ۔

تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬
تازه ترین خبریں
مقبول خبریں
پسندیده خبریں