10 May 2015 - 23:42
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 8121
فونت
حجت الاسلام ناصر عباس جعفری :
رسا نیوز ایجنسی ـ مجلس وحدت مسلمین کے رہنما نے کہا : سعودی قائم مقام سفیر جاسم الخالدی کی قبائلی گرینڈ جرگہ سے ملاقات اور 50 ہزار جنگجو جوانوں کی پیش کش پر اظہار تشکر سعودی حکومت کیجانب سے پاکستانی معاملات میں مداخلت کا کھلم کھلا اظہار ہے۔
حجت الاسلام ناصر عباس جعفري


رسا نیوز ایجنسی کے رپورٹر کی رپورٹ کے مطابق مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل حجت الاسلام ناصر عباس جعفری نے کراچی میں ڈاکٹر انور علی عابدی اور ڈی ایس پی ذوالفقار زیدی کو دہشت گردی کا نشانہ بنانے پر سخت غم و غصے کا اظہار کرتے ہوئے بیان کیا : بارہ گھنٹے کے اندر دو قیمتی جانوں کا ضیاع کراچی میں دہشت گردوں کے خلاف جاری آپریشن اور نیشنل ایکشن پلان کی عمل داری پر سوالیہ نشان ہے۔

انہوں نے تاکید کرتے ہوئے بیان کیا : دہشت گردی کے خاتمہ کے لئے ضروری ہے کہ ان قوتوں کے گرد بھی گھیرا تنگ کیا جائے جو ایسے مذموم عناصر کی فکری رہنمائی کے ساتھ ساتھ انہیں ملک دشمن کارروائیاں کرنے کے لئے وسائل بھی مہیا کرتے ہیں۔

مجلس وحدت مسلمین کے مرکزی آفس سے جاری ایک بیان میں ناصر عباس جعفری نے کہا : سعودی قائم مقام سفیر جاسم الخالدی کی قبائلی گرینڈ جرگہ سے ملاقات اور 50 ہزار جنگجو جوانوں کی پیش کش پر اظہار تشکر سعودی حکومت کیجانب سے پاکستانی معاملات میں مداخلت کا کھلم کھلا اظہار ہے۔

انہوں نے تاکید کی : سعودی سفیر کی ان غیر سفارتی سرگرمیوں کا حکومت کو فوری نوٹس لیتے ہوئے ان سے یہ وضاحت لی جانی چاہیئے کہ پاکستان کے اس داخلی معاملہ میں مداخلت کا اختیار انہیں کس نے دے رکھا ہے، جس کا فیصلہ پارلیمنٹ ملکی سلامتی اور زمینی حقائق کو مدنظر رکھتے ہوئے کرچکی ہے۔

حجت الاسلام ناصر عباس جعفری نے کہا : ضرب عضب سے ملک دشمن عناصر کے حوصلے پست ہوئے ہیں، لیکن آل سعود کے نمائندگان کی طرف سے کالعدم تنظیموں کے سربراہان سے ملاقاتوں کا سلسلہ دہشت گردوں کو پھر بزدلانہ کارروائیوں پر اُکساتا ہے، جس کے خلاف فوری اور ٹھوس حکومتی ردعمل کی اشد ضرورت ہے۔

انہوں نے بیان کیا : اگر کوئی ملک معدنی وسائل یا اقتصادی استحکام کے نشے میں سرشار ہو کر پاکستان کو اپنی کالونی سمجھتا ہے تو وہ جھوٹے زعم میں مبتلا ہے اور اسے اپنے دل سے یہ خیال نکال دینا چاہیئے۔

مجلس وحدت مسلمین کے رہنما نے وضاحت کی : پاکستان کے دیگر ریاستوں کے ساتھ باوقار اور برابری کی سطح پر تعلقات کے ہم متمنی ہیں۔ اس ملک کے حکمرانوں سمیت کسی کو بھی یہ حق حاصل نہیں کہ وہ ملی حمیعت و عظمت کو ذاتی مفادات کی نذر کریں۔

حجت الاسلام ناصر عباس جعفری نے تاکید کی : اس حکومت کو چاہیے کہ وہ دہشت گرد عناصر کے ساتھ ساتھ ان کے سہولت کاروں کو بھی اس ملک کا دشمن سمجھیں، بصورت دیگر اس ملک میں امن قائم کرنے کی کوششیں محض حکومتی دعووں تک محدود رہیں گی۔
 

تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬