14 October 2014 - 14:14
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 7359
فونت
حجت الاسلام محمد امین شہیدی :
رسا نیوز ایجنسی ـ مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی ڈپٹی سیکرٹری جنرل نے کہا : اٹھارہ ذی الحجہ امام علی علیہ السلام کی ولایت کے اعلان کا دن ہے، عید غدیر اللہ کی طرف سے بھیجے گئے تمام ایام میں سے سب سے بڑا دن ہے، یہ اللہ کے ولی کی ولایت کے اعلان کا دن ہے۔
حجت الاسلام محمد امين شہيدي


رسا نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی ڈپٹی سیکرٹری جنرل حجت الاسلام محمد امین شہیدی نے کہا : اٹھارہ ذی الحجہ امام علی علیہ السلام کی ولایت کے اعلان کا دن ہے، عید غدیر اللہ کی طرف سے بھیجے گئے تمام ایام میں سے سب سے بڑا دن ہے، یہ اللہ کے ولی کی ولایت کے اعلان کا دن ہے۔

عید غدیر کی مناسبت سے اپنے پیغام میں حجت الاسلام امین شہیدی نے کہا : اگر اعلان ولایت نہ ہو تو دین اس کے بغیر مکمل نہیں ہوتا، اللہ کی نعمتیں تمام نہیں ہوتی، اس اعلان کو پیش نظر رکھتے ہوئے ہمیں خوشیاں منانی چاہئیں، اٹھارہ ذی الحج کا دن اکمال دین اور اتمام نعمت کا نام ہے، اس دن کو پیش نظر رکھتے ہوئے ہمیں اللہ تعالٰی کی ولایت کے نفاذ کیلئے عملی کوششیں کرنی چاہیئیں ۔

انہوں نے وضاحت کی : غیبت امام زمانہ علیہ السلام میں ہمیں ظہور امام علیہ السلام سے قبل دین کی حاکمیت کیلئے پہلے سے زائد کوششیں تیز کرنی چاہئیں، ہمیں ملک سے کرپشن، بدعنوانی، رشوت ستانی اور ہر معاشرتی برائی کا راستہ روکنے کیلئے عملی اقدام اٹھانے چاہئیں، پاکستان کے اندر ہمیں ایک نیک اور صالح معاشرے کے قیام کیلئے اپنا فریضہ ادا کرنا چاہیئے۔

مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی ڈپٹی سیکرٹری جنرل نے تاکید کی : تمام مسلمانوں کا فرض بنتا ہے کہ دین کے عملی نفاذ میں حائل رکاوٹوں کو دور کریں۔

حجت الاسلام امین شہیدی نے بیان کیا : دین کے نفاذ میں دو طرح کے دشمن رکاوٹ بنے ہوئے ہیں، ایک وہ جو ظاہری ہیں جیسے امریکہ، اسرائیل اور دیگر استعماری طاقتیں اور دوسرے وہ جنہوں نے دین کا لبادہ اوڑھا ہوا ہے، جیسے پاکستان میں طالبان ہیں، اسی طرح القاعدہ اور آج کے دور میں داعش ہے، اس طرح کے گروہوں نے دین کا لبادہ اوڑھ کر اسلام کو نقصان پہنچانے کی ہرممکن کوشش کی ہے۔ انسانوں کی گردنیں گاجر مولی کی طرح اڑانے والوں سے امت مسلمہ کا ایک بڑا حصہ متاثرہ ہوا ہے، لٰہذا ضرورت اس امر کی ہے کہ ہم سب ملکر ان کا مقابلہ کریں۔
 

تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬