23 February 2016 - 22:23
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 9098
فونت
حجت الاسلام عارف حسین واحدی :
رسا نیوز ایجنسی ـ شیعہ علماء کونسل پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل نے کہا : ملک سے فرقہ وارانہ دہشتگردی کے خاتمہ کیلئے قانون نافذ کر نے والے اداراوں کو سنجیدہ اقدام کرنے کی ضرورت ہے اور حکومت کو کسی بھی دباو میں آئے بغیر دہشتگردوں کے خلاف جاری کارروائی کو نہیں روکنا چاہیے۔
حجت الاسلام عارف حسين واحدي


رسا نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق شیعہ علماء کونسل پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل حجت الاسلام عارف حسین واحدی نے کہا : قانون نافذ کرنے والے اداروں کی جانب سے ملک میں فرقہ وارانہ دہشتگردانہ کارروائیوں میں ملوث ڈیتھ سکواڈ کے سرغنہ آصف چھوٹوجو عباس ٹاون دھماکے سمیت متعدد کارروائیوں اور 100سے زائد افراد کے قتل میں ملو ث ہے کو گرفتار کرنا حکومت کی جانب سے فرقہ وارانہ دہشتگردی کے خاتمے کیلئے سود مند ثابت ہو گا۔

انہوں نے بیان کیا : ہمارا پہلے سے یہی مطالبہ رہا ہے کہ ملک سے فرقہ وارانہ دہشتگردی کے خاتمہ کیلئے قانون نافذ کر نے والے اداراوں کو سنجیدہ اقدام کرنے کی ضرورت ہے اور حکومت کو کسی بھی دباو میں آئے بغیر دہشتگردوں کے خلاف جاری کارروائی کو نہیں روکنا چاہیے۔

شیعہ علماء کونسل پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل نے بیان کیا : ملکی سالمیت کے لئے دہشتگری کا خاتمہ انتہائی ضروری ہے ۔ ملک میں شیعہ سنی کوئی مسئلہ نہیں چند مٹھی بھر تکفیری دہشتگرد ٹولہ ہی ملک میں امن کا دشمن ہے ۔ ان لوگوں کی اصلیت اور عزائم اب پاکستانی عوام کے سامنے ظاہر ہو چکے ہیں ۔

انہوں نے کہا : ملت جعفریہ نے اتنی قربانیوں کے باوجو کسی بھی لمحہ صبر کا دامن ہا تھ سے نہ چھوڑا اور قائد ملت جعفریہ پاکستان حجت الاسلام سید ساجد علی نقوی کی قیادت کے رہنما اصولوں اور ہدایات پر عمل پیراں ہو کر ملت جعفریہ نے ملّی پلیٹ فارم شیعہ علماء کونسل پر متحد ہو کر اُن خفیہ ہاتھوں اور ملک دشمن عناصر کی تمام سازشوں اور کوششوں کو ناکام بنایا جو اس ملک میں فرقہ وارانہ کشیدگی کو ہوا دے کر خانہ جنگی اور قتل و غارت گری کا بازار گرم کرنا چاہتے تھے ۔

حجت الاسلام عارف حسین واحدی نے بیان کیا : پاکستان بنانے میں اور بچانے میں ملت جعفریہ کی قربانیوں کا تسلسل جاری ہے ۔اور ہم وطن عزیز کو بچانے کیلئے کسی بھی قربانی سے دریغ نہیں کریں گے ۔

تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬