10 March 2016 - 15:56
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 9163
فونت
قائد ملت جعفریہ پاکستان کے دست مبارک سے ؛
رسا نیوز ایجنسی ـ جعفریہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن پاکستان کے مرکزی دفتر کا قائد ملت جعفریہ حجت الاسلام سید ساجد علی نقوی دام ظلہ العالی نے افتتاح کیا ۔
جعفريہ اسٹوڈنٹس آرگنائزيشن


رسا نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق جعفریہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن پاکستان کے مرکزی دفتر کا افتتاح قائد ملت جعفریہ حجت الاسلام سید ساجد علی نقوی کے دست مبارک سے ہوا، اس موقع پر مرکزی صدر جے ایس او پاکستان وفا عباس بھی موجود تھے۔

حجت الاسلام سید ساجد علی نقوی نے اس موقع پر جے ایس او کے جوانوں کے نام اپنے ایک بیان میں کہا : جے ایس او کو منظم کرنے کے لیے اور طلباء کی بہتری کے لیے ان کی تعلیمی اور اخلاقی بہتری کے لیے ایک مرکزی کردار ادا کرنا چاہیے۔ جس طریقے پر جے ایس او کی بہتر کارکردگی رہی ان ایام میں کوشش کریں کہ یہ کارکردگری اس سے زیادہ بہتر ہو۔

قائد ملت جعفریہ نے بیان کیا : جے ایس او پاکستان تعلیمی میدان میں طلاب کو آگے بڑھنے کے لیے مدد فراہم کرے، نظریاتی حوالوں سے ان کو مظبوط کرنے کی کوشش کی جائے۔ اور خاص طور پر اخلاقی حوالے سے ان کی تربیت کی زیادہ سے زیادہ کوشش کی جائے۔

انہوں نے بیان کیا : اس وقت جو سب سے بڑا مسئلہ در پیش ہے معاشرے میں بھی اور تنظیموں میں بھی وہ مسئلہ اخلاقیات کا ہے۔ اخلاقیات کو بہتر بنانا، کشیدگی اور تند و تیز اختلافی صورت حال کا خاتمہ کرنا ہم سب کی ذمہ داری ہے۔ میں امید کرتا ہوں کہ یہ مرکزی دفتر ان معاملات میں اپنا کردار ادا کرے گا ۔

مرکزی صدر جے ایس او پاکستان برادر وفا عباس نے کہا : قائد ملت جعفریہ حجت الاسلام سید ساجد علی کی رہنمائی میں یہ دفتر طلباء کے مسائل حل کرنے کے لیے ایک سنگ میل ثابت ہو گا۔ یہ دفتر طلباء کو مختلف یونیورسٹیوں میں داخلہ شیڈول، مختلف اداروں کی جانب سے ملکی و غیر ملکی اسکالرشپس ، تعلیمی میدانوں میں طلباء کے ساتھ ہر ممکن تعاون کرنے میں اپنا کردار ادا کرے گا۔

اس موقع پر رکن نظارت مولانا فرحت جوادی، مرکزی نشر و اشاعت سیکرٹری برادر ارسلان کاظمی، ڈویژنل صدر جے ایس او پاکستان برادر عبداللہ رضا، ڈویژنل جنرل سیکرٹری برادر عرفان، ڈویژنل نشر و اشاعت سیکرٹری برادر محمد علی، اسلامک ایمپلائز کے صدر برادر شاہد کاظمی، پی ای سی کے سربراہ وزیر حسین، پروفیسر مظہر ہاشمی اور دیگر احباب بھی موجود تھے۔
 

تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬